طلال چودھری کی چھترول کروانے والی لیگی ایم این اے نے (ن) لیگ کو خبردار کر دیا

لاہور، فیصل آباد (ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے رہنما طلال چوہدری کی اپنی ہی پارٹی کی ایک خاتون ایم این اے عائشہ رجب بلوچ کے بھائیوں کے ساتھ لڑائی کے دوران ان پر لڑائی کا معاملہ نیا رنگ اختیار کرگیا اور روزنامہ جنگ نے دعویٰ کیا ہے کہ خاتون ایم این اے نے اپنی نشست چھوڑنے کی وارننگ دیدی۔
طلال چودھری نے اپنے وضاحتی بیان میں کہا ہے کہ مجھ سے منسوب خبریں حقائق پر مبنی نہیں۔ کسی خاتون رکن اسمبلی سے تعلق نہیں، واقعہ کو سیاسی رنگ دینا قابل مذمت ہے، اپنا موقف جلد دونگا، انتظار کیا جائے،بعض شرپسندوں کا واقعہ کو سیاسی رنگ دینا قابل مذمت ہے۔ادھرمسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللّٰہ نے طلال چودھری پراٹیک معاملے کی انکوائری کیلئے پارٹی کے 2اراکین پر مشتمل کمیٹی بنا دی ہے جو دو سے تین روز میں معاملے کی چھان بین کر کے رپورٹ پارٹی قیادت کو پیش کریگی۔ خاتون ایم این اے کے ایک بھائی نے اپنے ایک بیان میں طلال چودھری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ طلال چودھری انکے لئے بھائیوں کی طرح ہیں۔ خاتون ایم پی اے کے گھر کا جائزہ لیکر وہاں پولیس اہلکار تعینات کردیا گیا۔دوسری طرف مسلم لیگ ن کی قیادت اس معاملے کو دبانے کی کوشش کررہی ہے اور طلال چودھری کے زخمی ہونے کی وجہ انکا کار ایکسیڈنٹ بتا رہی ہے ۔طلال چودھری اٹیک ے باعث زخمی حالت میں 3 روز سے لاہور کے نجی ہسپتال میں زیرعلاج ہیں۔ انکے زخمی ہونے کے واقعہ بارے مختلف اطلاعات زیرگردش ہیں۔ ان کے بھائی بلال چودھری کے مطابق کینال روڈ پر نا معلوم افراد نے ان پر اٹیک کیا اور انہیں معمولی چوٹیں آئی ہیں ۔ قبل ازیں طلال چودھری کے اہلخانہ کے حوالے سے یہ خبریں بھی سامنے آئیں کہ طلال چودھری گھر میں گرنے سے زخمی ہوئے اورکندھے پر شدید چوٹیں آئیں۔مقامی ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق ن لیگ کی مخصوص نشست پر منتخب خاتون ایم این اے کے بھائیوں نے طلال چودھری کو پھینٹی لگائی ہے جس کی وجہ سے ان کی ہڈیاں ٹوٹیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں