پوٹھوہار نیوز کی کالم نگار ڈاکٹر عارفہ صبح خان کا تعارف


پروفیسر ڈاکٹر عارفہ صبح خان
(پیدائش: 10 دسمبر،لاہور،پاکستان سے تعلق رکھنے والی اردو زبان کی نامور نقاد، محقق، شاعرہ، ادیبہ، معلمہ، صحافی، اینکر، ڈراما نگار، کالم نگار، مزاح نگار اور دانشور ہیں۔حسب و نسب کے اعتبار سے یوسف زئی پٹھان ہیں۔
تعلیم
پی ایچ ڈی یونیورسٹی آف ایجو کیشن، لاہور
ایم۔فل اردو یونیورسٹی آف ایجوکیشن، لاہور
ایم اے اردو پنجاب یونیورسٹی، لاہور
گریجوایشن اسلامیہ کالج برائے خواتین، لاہور
انٹر میڈیٹ اسلامیہ کالج برائے خواتین، لاہور
میٹرک گورنمنٹ گرلز ہائی سکول، لاہور
اعزازات
پاکستان کی پہلی مزاح نگار خاتون
پاکستان کی پہلی لیڈی کرائم رپورٹر
پاکستان کی پہلی پولیٹیکل لیڈی رپورٹر
صدر ویمن جرنلسٹ فورم، پریس کلب لاہور (مسلسل پانچ سال)
12 گولڈ میڈلز (تین مرتبہ ہیٹ ٹرک)
65 دیگر ادبی و صحافتی ایوارڈز
20 شیلڈز
07 بار مسلسل بہترین صحافی کا ایوارڈ
خطابات
صحافت کی شیرنی (مجید نظامی مرحوم)
خواتین کی پطرس بخاری (کرنل محمد خان)
اُردُو ادب کی قلو پطرہ (ڈاکٹر جمیل جالبی مرحوم)
اعزازات کی ملکہ (ادیب جاودانی)
ادب کا چمکتا ستارہ (گورنر پنجاب چوہدری سرور)
چلتا پھرتا انشائیہ (شفیق الرحمٰن)
مزاح کی خان زادی (ڈاکٹر وحید قریشی مرحوم)
پیکر جرأت (مجیب الرحمٰن شامی)
زیرک نقاد (ڈاکٹر سلیم اختر)
ادب و صحافت کی لیلیٰ خالد (ڈاکٹر اختر شمار)
امکانات کی دنیا (حسن نثار)
عہد حاضر کی ارسطو (گورنر پنجاب چوہدری سرور)
ادبی و صحافتی حیثیت و مراتب
چیف ایگزیکٹو ابن آدم فاؤنڈیشن انٹرنیشنل
چیئر پرسن خیابان ادب، ادبیات پاکستان
صدر پاکستان فیڈرل یونین آف کالمسٹ
صدر ویمن ونگ گھر فاؤنڈیشن
تعلیمی سفیر، غزالی ایجوکیشن ٹرسٹ
نان آفیشل وزیٹر آف پنجاب جیل
اعزازی ممبر پریس کلب، لاہور (لائف ٹائم)
سینیئر جرنلسٹ، نوائے وقت، لاہور
ممبر نظریہ پاکستان ٹرسٹ، لاہور
نائب صدر، اقبال دوست سوسائٹی
ممبر ادبی بیٹھک، الحمرا سینٹر، لاہور
ممبر خواجہ فرید سنگت، لاہور
ممبر جگنو انٹر نیشنل سوسائٹی
سابق ایگزیکٹو ممبر، انسداد تشدد کمیٹی برائے خواتین
پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کی خدمات
پرنٹ میڈیا: لیڈی رپورٹر، میگزین ایڈیٹر، فیچر رائٹر، کالم نگار، ایڈیٹوریل اسسٹنٹ، انچارج ایڈیشنز
روزنامہ جنگ، نوائے وقت، روزنامہ پاکستان، روز نامہ انصاف
الیکٹرانک میڈیا: ڈراما رائٹر
(نئے راستے، کیوں، لیڈی رپورٹر، آئینہ)
الیکٹرانک میڈیا: اینکر، پروڈیوسر، تجزیہ نگار
پی ٹی وی، سٹار ایشیا، رائل نیوز، کوہ نور
الیکٹرانک میڈیا: اینکر سیاسی پروگرامز
(پولٹیکل ٹائم،ہاٹ ایشوز،پولٹیکل ٹمپریچر،ون ٹو ون)
تعلیمی خدمات
سابقہ معلمہ الیگزر اکیڈمی، گارڈن ٹاون، لاہور
سابقہ لیکچرار سٹینڈرڈ کالج، لاہور
سابقہ ہیڈ آف اردو ڈیپارٹمنٹ، فضائیہ کالج، لاہور کینٹ
وزیٹنگ پروفیسر پنجاب یونیورسٹی لاہور
وزیٹنگ پروفیسر یونیورسٹی آف ساؤتھ ایشا، لاہور
وزیٹنگ پروفیسر بہاؤ الدین یونیورسٹی، لاہور کیمپس
وزیٹنگ پروفیسر یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور
وزیٹنگ پروفیسر یونیورسٹی آف سینڑل پنجاب، لاہور
وزیٹنگ پروفیسر لاہور کالج یونیورسٹی، لاہور
وزیٹنگ پروفیسر منہاج یونیورسٹی، لاہور
سماجی خدمات
اکتوبر 1998ئنوائے وقت میں چار جلے بچوں کی خبر شائع کی۔ ان کے لیے 400000 روپے کی خطیر رقم اکٹھی کر کے امریکہ علاج کے لیے بھجوایا۔ کامیاب سرجری کے بعد یہ بچے 03 دسمبر 1999ء کو وطن واپس آئے۔
29 اگست 1999ء کو 06 اپاہج بچوں کے لیے بیت المال سے تا حیات وظیفہ مقرر کروایا۔
18 مارچ 1999ء کو نبیحہ نامی بچی جو آگ سے بُری طرح جھلس گئی تھی اس کی خبر لگائی جس پر بروقت کارروائی کرتے اس وقت کے وزیر اعظم نواز شریف نے 3600000 روپے بیرون ملک علاج کے لیے عطا کیے۔
14 جولائی 1998ء کو اپنے کالم غریبوں کی دعائیں لیں پر وزیر اعلی پنجاب سے خواتین کے خلاف تشدد کی روک تھام پر اعلیٰ سطح کی کمیٹی بنوائی اور سینکڑوں عورتوں کی مدد کی۔
04 دسمبر 1999ء کو جاوید اقبال نامی نفسیاتی مریض جس نے 100 سے زائد بچوں کو اغوی اور قتل کیا تھا، اس خبر پر جاوید نامی بچہ دس ماہ کی طویل مدت کے بعد اپنے والدین کو مل گیا۔
20 اپریل 1999ء کو زہرہ نامی بچی جس کے دل میں سوراخ تھا اس کا مفت علاج چلڈرن ہسپتال لاہور سے کروایا۔
03 اگست 1999ء کو ایم ایس سی کرنے والی بے روز گار قیصرہ قریشی جو گذشتہ نو سال سے نوکری کے لیے دھکے کھا رہی تھی، گریڈ 17 میں نوکری دلوائی۔
04 مئی 1999ء کو سمیرا نامی تھیلیسیمیا جیسے موذی مرض کی شکار بچی کا مفت علاج کروایا۔
ٹانگوں سے معزور مسلم لیگی خاتون ورکر سائرہ خان کو وزیر اعلیٰ پنجاب سے 50000 روپے کی امداد دلوائی۔
خواتین کے لیے انسداد تشدد کمیٹی بطور ایگزیکٹو ممبر چار خواتین کے حق میں ایف۔آئی۔آر کٹوائیں۔ ان کے گھر بسانے میں پوری پوری مدد کی۔ 13 عورتوں کو طلاق جیسی لعنت سے بچا کر ان کے شوہروں کو سمجھایا، آمادہ کیا اور ان عورتوں کو دار الامان جانے کی بجائے شوہروں کے گھروں میں واپس بسایا۔ سابق وزیر پیر بنیا مین کے ذریعے جہیز کی روک تھام اور ون ڈش کا قانون بنوایا۔
تحریری خدمات
2000 خبریں
1300 کالمز
1200 آرٹیکلز
1000 مضامین کی ایڈیٹنگ
400 ایڈیشنز
350 انٹرویوز
150 فیچرز
100 انشایئے
80 تقرری مسودے
75 ریڈیو خاکے
70 افسانے
60 تنقیدی مضامین
60 بچوں کی کہانیاں
55 تبصرے
150 رپورٹس
35 شخصی خاکے
200 غزلیات
150 پابند نظمیں
250 آزاد نظمیں
نئے راستے (ٹی وی ڈراما)
آئینہ (ٹی وی ڈراما)
کیوں (ٹی وی ڈراما)
لیڈی رپورٹر (ٹی وی ڈراما)
تصانیف
اردو تنقید کا اصلی چہرہ
(تنقید) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2009ء (پاکستان کی تمام بڑی جامعات میں ایم۔فل اور پی۔ایچ۔ڈی کے لیے مجوزہ کتب میں شامل ہے)
تنقیدی گرہیں
(تنقید) یو ایم ٹی پریس، لاہور 2018ء [2]
ما بدولت
(مزاحیہ) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2005 ء [3]
عکس زن
(ویمن ایشوز) برائٹ بکس، لاہور 2000ء
تجاہلِ عارفانہ
(کالموں کا مجموعہ) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2006ء [4]
شٹ اپ
(مزاحیہ) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2003ء
اماں حوّا سے اماں کونسلر تک
(سیاسی خواتین) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2002ء
کُرکُرے کردار
(مزاحیہ) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2007ء
اب صبح ہونے کو ہے
(شاعری) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2010ء [5]
صبح ہو گئی جاناں
(شاعری) علم و عرفان پبلشرز، لاہور 2011ء
عشق بلا خیز
(شاعری) الوقار پبلشرز، لاہور 2019ء [6]
ادبی ستارے
(انٹرویوز) مکتبہ اردو ادب، لاہور 2013ء
کافر ادا
(افسانے) الوقار پبلشرز، لاہور 2018ء [7]
سیاستدانوں کے سائیڈ ایفیکٹس
(کالمز) روبی پبلی کیشنز، لاہور 2018ء

اپنا تبصرہ بھیجیں